Dhondo Ge Agar Mulkun Mulkun By Abida Parveen Urdu Lyrics




ڈھونڈو گے اگر ملکوں ملکوں ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم

تعبیر ہے جس کی حسرت وغم اے نفسو وہ خواب ہیں ہم

اے درد بتا کچھ تو ہی بتا اب تک یہ معملہ حل نہ ہوا

ہم میں ہے دل بے تاب نہاں یا آپ دل دبے تاب ہیں ہم

میں حیرت وحسرت کا مارا خاموش کھڑا ہوں ساحل پر

دریائے محبت کہتا ہے کچھ بھی نہیں پایاب ہیں ہم

لاکھوں ہی مسافر چلتے ہیں منزل پر پہنچتے ہیں دو ایک

اے اہل زمانہ قدر کرو نایاب نہ ہوں کم یاب ہیں ہم

مرغان قفس کو پھولوں نے اے شاد یہ کہلا بھیجا ہے

آجاؤ جو تم کو آنا ہو ایسے میں ابھی شاداب ہیں ہم

Dhondo Ge Agar Mulkun Mulkun Milne Ke Nahi Nayab Hain Hum

Tabeer Ha Jis Ki Hasrat O Gum Aye Nafsun Wo Khawab Hain Hum

Aye Dard Bata Kuch Tu He Bata Ab Tak Ye Mamla Hal Na howa

Hum Mein Ha Dil Betab Naha Ya Ap Dil Dabe Taab Hain Hum

Mein Hairat o Hasrat Ka Mara Khamosh Khara Hon Sahil Per

Daraye Mohabat Kehta Ha Kuch Bhi Nahi Payab Hain Hum

Lakhun He Mosafir Chalte Hain Manzil Per Pehnchty Hain Do Eik

Aye Ahly Zamana Kadar Karo Nayab Na Hon Kamiyab Hain Hum

Morghan e kafs Ko Pholon Ne Aye Shaad Ye Kahla Bheeja Ha

Ajao Jo Tum Ko Ana Ho Aise Mein Abhi Shadab Hai Hum

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top